آپ کونسا رستہ چنیں گے؟

اگر دنیاوی کامیابی کے لئے محنت شرط ہے تو یہ کیسے ممکن ہے کہ جنت بغیر اس کے حصول کی محنت کئے مل جائے؟ جس چیز کے حصول کی محنت کی جائے گی

                                                                                                                                                                                اسی کا پھل بھی ملے گا۔

دنیا میں کسی بھی کام کا پھل محنت کئے بغیر نہیں حاصل ہوتا۔ انسان کے کھانے کو ہی دیکھیں۔ یہ کتنے مرحلوں پر محیط ہے۔ اس کے پیچھے کتنی محنت لگتی ہے۔ پہلے اس کی کاشت کی جاتی ہے جہ کہ خود کئی مشکل مراحل کا مجموعہ ہے، پھر اس کی کٹائی کی جاتی ہے، پھر منڈی لا کر بیچا جاتا ہے، پھر اسے محفوظ کیا جاتا ہے، پھر گاہک بازار جا کار اسے خریدتا ہے اور گھر لاتا ہے، پھر اسے گھر میں پکایا جاتا ہے۔ اسی طرح دنیا کے تمام معاملات ہیں۔

اسی حقیقت کو قرآن عظیم یوں بیان کرتا ہے:

وَأَنْ لَيْسَ لِلْإِنْسَانِ إِلَّا مَا سَعَىٰ

اور یہ کہ انسان کو وہی ملتا ہے جس کی وہ کوشش کرتا ہے ۔ [سورۃ النجم آیۃ ۳۹]

محنت کے بغیر تو ایک ہی چیز حاصل ہو تی ہے۔۔۔۔ اور وہ ہے بربادی اور خسارہ۔ کسان اگر فصل کی طرف رغبت نہیں کرے گا اور گھر بیٹھا آرام کرتا رہے گا تو فصل برباد ہو جائے گی۔ بیوپاری اپنا سامان منڈی میں لا کر نہیں بیچے گا تو اس کا سامان نہیں بکے گا اور خراب ہو جائے گا۔ دکاندار دکان پر نہ آئے گا تو اس کا سامان خراب ہو جائے گا۔ خریدار مشقت کر کے پیسا نہیں کمائے گا اور پھر دکان پر جا کار خریداری نہیں کرے گا تو اس کے گھر راشن ہنیں آئے گا۔ بر بادی کا راستہ آسان ہوتا ہے اور کامیابیوں کا راستہ مشکل۔ تبھی تو ہر شخص کامیاب نہیں ہوتا۔

پس یہ کیسے توقع کی جا سکتی ہے کہ جہاں پوری زندگی بھر کی فلاح یا خسارہ کا سوال ہو وہاں کامیابی بغیر محنت گھر بیٹھے حاصل ہو جائے گی۔ بلکہ اشارہ تو یہ ملتا ہے کہ کیونکہ معاملہ سب سے سنگین ہے اس لئے اس میں محنت و قربانی بھی سب سے زیادہ ہی لگے گی۔ محنت سے جی چرانے اور اپنے آپ کو جھوٹے دلاسے دینے سے ایک ہی چیز حاصل ہو سکتی ہے۔ ہمیشہ کی بربادی و خسارہ۔

اگر دنیا کمانے کے لئے محنت کریں گے تو دنیا ملے گی، اگر جنت کمانے کے لئے کریں گے تو جنت۔ یہ نہیں ہو سکتا کہ آپ ساری زندگی دنیا کے حصول میں کھپا دیں اور پھر یہ توقع کر کے بیٹھ جائیں کے آخرت میں آپ کو جنت مل جائے گی۔ صرف اس لئے کہ آپ ایک مسلمان گھرانے میں پیدا ہوئے اور آپ کے والدین نے آپ کا نام مسلمانوں والا رکھ دیا؟ بیری کا بیج بو کر یہ توقع رکھی جائے کہ آم ملیں گے اسے حماقت ہی کہا جا سکتا ہے اور کچھ نہیں۔

تو آپ کا کیا ارادہ ہے؟

آپ ہمیشہ کی آسانیوں کا مشکل، دشوار گزار اور مصائب والا رستہ اختیار کریں گے یا پھر آگ ، ہمیشہ کے عذاب، ذلت اور رسوائی حاصل کرنے کا آسان، سہل اور دنیاوی فوائد والا رستہ؟